ہندوستان

پنجاب میں انسانیت شرمسار : وحشیانہ پٹائی اور پیشاب پینے پر مجبور کئے جانے کی وجہ سے دلت کی موت

پنجاب میں انسانیت شرمسار:

وحشیانہ پٹائی اور پیشاب پینے پر جبرکئے جانے دلت کی موت

چنڈی گڑھ ۔ ۱۶؍نومبر: پنجاب کے سنگرور ضلع میں 37 سالہ ایک دلت شخص کی ہفتے کی صبح یہاں ایک ہسپتال میں موت ہو گئی، جسے وحشیانہ طریقہ سے پیٹا گیا اور پیشاب پینے کے لئے مجبور کیا گیا تھا۔ پولیس نے اس کی اطلاع دی ہے ۔ سنگرورکے سینئر پولیس سپرنٹنڈنٹ سندیپ گرگ نے بتایا کہ اس نے پوسٹ گریجویٹ میڈیکل تعلیم اور ریسرچ انسٹی ٹیوٹ میں دم توڑ دیا۔ انہیں پی جی آئی ایم ای میں داخل کرایا گیا تھا۔ اس کے پاؤں کو کاٹنا پڑا تھا۔گرگ نے بتایا کہ اس معاملے میں درج ایف آئی آر میں تعزیرات ہند کی دفعہ 302 (قتل) کا اضافہ کیا ہے۔ چانگلی والا گاؤں کے رہنے والے اس دلت شخص کا 21 اکتوبر کورنکو نامی شخص اور کچھ دیگر افراد کے ساتھ تنازعہ ہوا تھا، لیکن دیہی باشندوں کی مداخلت سے معاملہ حل کیا گیا تھا۔اس نے پولیس کو بتایا تھا کہ 7 نومبر کو رنکو نے اسے اپنے گھر بلایا اور اس نے اس معاملے کو لے کر اس سے بحث کی۔ دلت شخص نے الزام لگایا تھا کہ اس دوران چار لوگوں نے اسے ایک ستون سے باندھ کر مارا پیٹا گیا اور جب اس نے پانی مانگا تو اس کے پیشاب پینے کے لئے مجبور کیا گیا۔پولیس نے بتایا کہ چاروں افراد کو گرفتار کر لیا گیا اور ان کے خلاف اغوا، غلط طریقے سے قیدی بنانے اور قانون کی کئی دفعات اور ایس سی ایس ٹی ایکٹ کے تحت کیس کیا گیا۔ پنجاب ریاست سپریم کورٹ کمیشن نے اس واقعہ کو لے کر سنگرور کے سینئر پولیس سپرنٹنڈنٹ سے رپورٹ مانگی ہے۔ کمیشن کی صدرتیجندرکورنے جمعہ کو کہا کہ میڈیا رپورٹس کے ذر یعہ اس پروگرام کی معلومات حاصل کرنے کے بعد کمیشن نے اس معاملے میں از خود نوٹس لیا اور رپورٹ مانگی ہے۔

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker