ہندوستان

مرکزعلم ودانش علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی تعلیمی وثقافتی سرگرمیوں کی اہم خبریں

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی شمسی توانائی کے شعبہ میں اپنی مثالی حصولیابی سے حکومت ہند کے گرین کیمپس اعزاز کی مضبوط دعویدار
علی گڑھ، 9؍دسمبر2019: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو)نے اپنے کیمپس میں محض دو سال کی مدت میں 60؍لاکھ یونٹ سے زائد کی بجلی کھپت کو روایتی الیکٹریسیٹی گِرِڈ سے سولر گِرِڈ میں تبدیل کردیا ہے ، جس کے نتیجہ میں مذکورہ مدت میں تقریباً 50؍لاکھ کلو گرام سی او ٹو (کاربن ڈائی آکسائڈ) اِخراج کی بچت ہوئی ہے۔ یہ کامیابی اے ایم یو کیمپس میں گِرڈ سے مربوط 6.5 میگاواٹ کے سولر پاور پلانٹ کی بدولت حاصل ہوئی ہے جو ملک کے کسی بھی تعلیمی ادارے میں نصب سب سے بڑا گِرِڈ انٹگریٹیڈ سولر پاور پلانٹ ہے اور دنیا کے سب سے بڑے غیرکاروباری قابل تجدید توانائی تنصیبات میں سے ایک ہے۔
اس حصولیابی سے اے ایم یو ، حکومت ہند کی وزارت برائے جدید و قابل تجدید توانائی سے اولین گرین کیمپس کا اعزاز حاصل کرنے کی مضبوط دعویدار ہوگئی ہے۔ خیال رہے کہ گرین کیمپس کے لئے وزارت نے شرط رکھی ہے کہ روایتی توانائی وسائل پر انحصار پانچ برس میں 25؍فیصد کم ہوجائے۔
قابل ذکر ہے کہ آب و ہوا کی تبدیلی پر اقوام متحدہ کے معاہدہ کے مطابق تقریباً 200؍ملکوں نے اپنے یہاں سی او ٹو اخراج کو کم کرنے کا عہد کیا ہے۔ اس کے تحت حکومت ہند نے سال 2030ء تک سی او ٹو اخراج میں 35فیصد تک کی کمی کرنے کا عہد کیا ہے، جس کے لئے توانائی پیداوار کے نظام کو 40؍فیصد تک قابل تجدید توانائی کے وسائل پر مبنی کرنا ہے۔
وائس چانسلر پروفیسر طارق منصور نے کہا کہ اے ایم یو میں نصب سولر پلانٹ، قومی شمسی توانائی مشن کا حصہ ہے جس کا ہدف 100,000 میگاواٹ سولر فوٹو وولٹک پاور پلانٹوں کو ملک میں پاور گِرِڈ سے مربوط کرنا ہے۔ اے ایم یو کی شمسی توانائی تنصیبات سے ہر دن 27000کلوگرام سی او ٹو اِخراج پر قابو پایا گیا ہے۔ یونیورسٹی کی اس کامیابی کو تسلیم کرتے ہوئے حکومت اترپردیش کے محکمۂ اضافی توانائی وسائل نے اترپردیش میں توانائی تحفظ مہم میں تعاون کے لئے اے ایم یو کو دوئم انعام سے سرفراز کیا ہے۔
قومی اہمیت کے حامل اس پروجیکٹ کے تحت اے ایم یو نے کئی ٹریننگ پروگرام بھی منعقد کئے ہیں۔ اس میں پشچمانچل ودّیوت وِترن نگم لمیٹیڈ (پی وی وی این ایل) کے مرادآباد، مظفرنگر اور شاملی ڈویژن کے انجینئروں اور اترپردیش پاور کارپوریشن لمیٹیڈ کے انجینئروں کے لئے ٹریننگ پروگرام شامل ہیں۔ اس کے علاوہ جدید و قابل تجدید توانائی وزارت اور وزارت امور خارجہ کے ذریعہ دیگر ملکوں کے انجینئروں کے لئے منعقد بین الاقوامی ٹریننگ پروگراموں میں خصوصی دعوت پر خطبات بھی دئے گئے ہیں۔ ان ٹریننگ پروگراموں کے ذریعہ ہندوستان ماحولیات دوست شمسی توانائی وسائل کے نفاذ کے لئے انٹرنیشنل سولر الائنس میں شامل ممالک کی مدد کررہا ہے۔
مزید یہ کہ اے ایم یو کی طرف سے کئی تعلیمی اداروں مثال کے طور پر جامعہ ملیہ اسلامیہ، میرٹھ یونیورسٹی، الہ آباد یونیورسٹی، تیرتھانکر یونیورسٹی اور انٹگرل یونیورسٹی کے ساتھ ہی بریلی اور میرٹھ کے اسمارٹ سٹی پروجیکٹوں اور کئی دیگر صنعتی اداروں کو تکنیکی رہنمائی اور تعاون فراہم کیا گیا ہے۔
٭٭٭٭٭٭
اے ایم یو اے بی کے ہائی اسکول گرلس میں انٹرہاؤس اسپورٹس ہفتہ کی اختتامی تقریب کا انعقاد
علی گڑھ، 9؍دسمبر: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو)کے اے بی کے ہائی اسکول گرلس کے انٹرہاؤس اسپورٹس ہفتہ کی اختتامی تقریب پرائمری سیکشن میں منعقد ہوئی ، جس میں پروفیسر ضمیراللہ (چیئرمین، فزیکل ایجوکیشن شعبہ) بطور مہمان خصوصی اور پروفیسر شکیل احمد صمدانی (ڈین، فیکلٹی آف لاء) بطور مہمان خاص شریک ہوئے۔
پروفیسر ضمیر اللہ نے اپنے خطاب میں طالبات پر زور دیا کہ وہ کھیل کی سرگرمیوں میں ضرور شامل ہوں جس سے ان کی صحتمند نشو و نما ہوتی ہے۔ پروفیسر شکیل احمد صمدانی نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ کھیل کود شخصیت کی ارتقاء میں اہم رول ادا کرتے ہیں اور اس سے ٹیم اسپرٹ پیدا ہوتی ہے۔ بانیٔ درسگاہ سرسید احمد خاں کا ذکر کرتے ہوئے انھوں نے کہاکہ سرسید اپنے طلبہ کو ہر پہلو سے ممتاز دیکھنا چاہتے تھے چنانچہ انھوں نے طلبہ کی تربیت پر خاص توجہ دی۔ پروفیسر صمدانی نے طالبات کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے کہا کہ کھیل بھی تربیت کا ایک اہم حصہ ہے ۔
اس سے قبل پرنسپل ڈاکٹر محمد عباس نیازی نے مہمانوں کا استقبال کیا۔ وائس پرنسپل ڈاکٹر صبا حسن نے بھی اظہار خیال کیا اور اسپورٹس ہفتہ کو کامیابی سے ہمکنار کرنے کے لئے انچارج مسٹر محمد عمران، مسٹر شمشاد نثار ، ہاؤس انچارجوں ، کوآرڈنیٹر ڈاکٹر فرحت پروین اور دیگر افراد کا شکریہ ادا کیا۔
اسپورٹس ہفتہ میں سات آؤٹ گیمز میں بچوں نے حصہ لیا تھا۔ پرائمری سیکشن جونیئر گروپ میں کھو کھو اور ڈوج بال میں بلیو ہاؤس نے اور رسہ کشی میں ریڈ ہاؤس نے اوّل انعام حاصل کیا۔لیمن ریس میں ریڈ ہاؤس کی حُمیرا نے اور سَیک ریس میں ریڈ ہاؤس کی ابریش نے پہلا مقام حاصل کیا۔ جونیئر گروپ میں اوور آل چیمپیئن کی ٹرافی بلیو ہاؤس اور ریڈ ہاؤس نے حاصل کی، جب کہ رنر اپ ٹرافی گرین ہاؤس کو دی گئی۔
سینئر گروپ میں پیراشوٹ کے مقابلہ میں یلو ہاؤس فاتح رہا جب کہ ڈاج بال میں ریڈ ہاؤس نے اوّل انعام جیتا۔ والی بال اور کھو کھو میں بلیو ہاؤس کو فاتح قرار دیا گیا۔ سَیک ریس میں بلیو ہاؤس کی روزی نے اور لیمن ریس میں یلو ہاؤس کی ارم خاں نے پہلا انعام حاصل کیا۔ اوورآل چیمپیئن ٹرافی بلیو ہاؤس نے جیتی جب کہ یلو ہاؤس کو رنر اپ قرار دیا گیا۔
٭٭٭٭٭٭
اے ایم یو کے سول انجینئرنگ شعبہ میں اسمارٹ سٹی کے موضوع پر فیکلٹی ڈیولپمنٹ پروگرام کا انعقاد
علی گڑھ، 9؍دسمبر:ذاکر حسین کالج آف انجینئرنگ اینڈ ٹکنالوجی، علی گڑھ مسلم یونیورسٹی (اے ایم یو)کے شعبۂ سول انجینئرنگ میں اسمارٹ سٹی کے موضوع پر دو ہفتہ کا ایک فیکلٹی ڈیولپمنٹ پروگرام منعقد کیا گیا ہے جس کے افتتاحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر بی ایچ خاں (ڈین، فیکلٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹکنالوجی، اے ایم یو) نے کہاکہ حکومت ہند کے اسمارٹ سٹی مشن نے متعلقہ شہروں کے باشندوں کی زندگی بہتر ہوگی اور ٹکنالوجی لوگوں کی زندگیوں کو آسان بنائے گی۔ پروفیسر خان نے اسمارٹ سٹی مشن کے مختلف پہلوؤں پر روشنی ڈالی۔
یہ فیکلٹی ڈیولپمنٹ پروگرام، حکومت ہند کے ٹیکنیکل ایجوکیشن کوالٹی امپرومنٹ پروگرام کے تحت منعقد کیا گیا ہے۔ پروفیسر ایم ایم سفیان بیگ (پرنسپل ، ذاکر حسین کالج آف انجینئرنگ اینڈ ٹکنالوجی) نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ امریکہ نے اپنے شہروں کو اسمارٹ شہروں میں تبدیل کردیا ہے۔ انھوں نے کہاکہ اسمارٹ سٹی پروجیکٹ سے شہری ضروریات کی تکمیل کے لئے ٹکنالوجی اور ماہرین ایک ساتھ آتے ہیں اور شہر کے لئے طویل مدتی منصوبہ بندی کی جاتی ہے تاکہ عوامی مسائل کا پائیدار حل نکل سکے۔
سول انجینئرنگ شعبہ کے قائم مقام چیئرمین پروفیسر آئی ایچ فاروقی نے شعبہ کے بڑے ریسرچ پروجیکٹوں پر روشنی ڈالی ، جس میں یوروپی یونین کے امداد یافتہ پروجیکٹ بھی شامل ہیں ، جس کی قیادت پروگرام کنوینر پروفیسر ندیم خلیل کررہے ہیں۔
پروفیسر ندیم خلیل نے اسمارٹ سٹی پروجیکٹوں کی کیس اسٹڈی پر گفتگو کرتے ہوئے مسائل اور ان کے حل کا ذکر کیا۔ انھوں نے ان پروجیکٹوں میں شہریوں کی حقیقی ضروریات کو ملحوظ خاطر رکھے جانے کے ساتھ ہی شہریوں کے ڈسپلن اور احساس ذمہ داری پر بھی زور دیا۔
علی گڑھ نگر نگم کے چیف انجینئر مسٹر کلبھوشن وارشنے نے اسمارٹ سٹی پروجیکٹوں میں مسائل پر قابو پانے کے سلسلہ میں گفتگو کی۔ آخر میں ڈاکٹر سہیل ایوب نے اظہار تشکر کیا۔

Tags

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker