ہندوستان

مولانا محمد شبلی القاسمی قائم مقام ناظم امارت شرعیہ نے دھرناکو منظم بنا نے کے لیے بلائی میٹنگ ،یہ وقت بے حوصلگی کا نہیں بلکہ مرادانہ وار مقابلہ کاہے

پٹنہ:13؍جنوری(عادل فریدی؍بی این ایس)آج مؤرخہ13 جنوری 2020 روز پیر کو سی اے اے اور این آ ر سی کے خلاف احتجاجی منظم مظاہرہ ہارون نگر سیکٹر ۱؍ پھلواری شریف، پٹنہ اور سبزی باغ پٹنہ کے سلسلہ میںامار ت شرعیہ کے ذمہ داروں (قائم مقام ناظم مولانا شبلی القاسمی ،نائب نظماء ،قضاۃ حضرات اور معزز اراکین اورمولانا گوہر اما م ،امام شاہی سنگی مسجد ،مولانا امام الدین قاسمی امام وخطیب ملی مسجد ملت کالونی ،ارشد ربانی صاحب ،حاجی گڈو(ارمان ملک) اشرف ربانی نیا ٹولہ،شمیم اقبال صاحب،رئیس ملک صاحب ، اشرف نیتا ،محمداشتیاق صاحب،محمد ہمایوں اختر،مولانا اقبال صاحب،مولاناضیاء الرحمن صاب،حافظ اکرم صاحب ،جناب خورشیدصاحب ،مہتاب عالم ،افروزاحمد اس کے علاوہ مختلف محلے کے ذمہ داران،سماجی کارکنان حضرات نے اس میٹنگ میںشرکت کی ،احتجاجی مظاہرہ اوردھرنہ کو منظم کرنے کے لیے امارت شرعیہ میں دھرنا کو منظم بنا نے کے تعلق سے گفتگو ہوئی جس میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ اس دھرنہ کواس وقت تک جاری رکھنا ہے جب تک یہ ظالمانہ قانون حکومت وقت واپس نہیں لیتی ہے ۔
گذشتہ کل مورخہ 12-01-2020کودھرنا کے لیے حاجی حرمین قبرستان پھلواری شریف کے سامنے کی جگہ طے کی گئی تھی جس کو قبرستان کے سکریٹری نے بھی قبول کر لیا تھا ، مگر پولیس نے اس کی اجازت نہیں دی اورطاقت کے بل پر روک دیا ۔قائم مقام ناظم جناب مولانا محمد شبلی قاسمی صاحب پولیس کی اس حرکت پر بہت برہم ہوئے اور کہا کہ تھانے سے اجازت نہیں ملی تو تھانے کا ہی گھیراو ٔ کیا جائے ،اور ہم وہیں جاکر احتجاج کریں،یہ ہمارے حقوق کو دبانے کی پولیس کی طرف سے ناپاک حرکت ہے ۔ پورے ملک میں اس کے خلاف لوگ سڑکوں پر احتجاج کر رہے ہیں تو پھلواری میں کیوں نہیں؟ چنانچہ امارت شرعیہ کے معاون ناظم مولانا احمد حسین قاسمی، آفس سکریٹری مولانا محمد ارشد رحمانی اور مولانا احمد سجادی اور مولانا صابر حسین قاسمی کارکنان امارت شرعیہ و کئی دیگر کارکنان امار ت شرعیہ کے ساتھ ان لوگوںکو لے کر پھلواری شریف تھانے گئے ، تھانے کے احاطہ میں پر زور احتجاج و مظاہرہ کیا اور CAA,NRC,NPRکے خلافنعرے لگائے ۔ پھرانسپکٹر، بی ڈی اواورسی او سے امات شرعیہ کے ذمہ داران اور سابق ایم پی جناب علیانو صاحب نے پر امن دھرناکے لئے اجازت مانگی بالآخر پولیس نے امارت شرعیہ کے دباوبنانے پر ہارون نگر سکٹر۔ 01 میں اس جگہ پر دھرنے کی اجازت دی جہاںانہوںنے چنددنوں پہلے دھرنا ختم کرایا تھا۔اس وقت ہارون نگر میں دھرنا جاری ہے ، جس میں خواتین بھی شریک ہیں ، امارت شرعیہ کے قائم مقام ناظم مولانا محمد شبلی قاسمی صاحب کے ساتھ امارت شرعیہ کے دیگر ذمہ داران،قضاۃ اور نائب نظماء اور اراکین بھی اس میں شرکت کر رہے ہیں ،دھرنے میں شریک افراد کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے قائم مقام ناظم صاحب نے کہاکہ ہم اس قانون کے واپس آنے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے اور ہر اس قانون کی مخالفت کریں گے جو ہندوستان کے لوگوں کے بنیادی حقوق کو متأثر کرے گا یا ان کے شہری حقوق چھینے گاآپ نے مزید کہا کہ یہ وقت بے حوصلگی کا نہیں بلکہ مردانہ وار مقابلہ کاہے ،ہم کسی بھی حال میں ہمت نہیں ہاریں گے بلکہ احتجاج میں شریک اپنے بھائی اور بہنوں کا آخری وقت تک ساتھ دیں گے ۔امارت شرعیہ پوری مضبوطی کے ساتھ ہر سطح پر اس ظالمانہ قانون کی مخالفت کررہی ہے اور اس وقت تک کرے گی جب تک حکومت اس ظالمانہ قانون کو واپس نہ لے لے اور اس کے خلاف ہونے والے ہر احتجاج و مظاہرہ کی روز اول سے حمایت کر تی ہے اور کرتی رہے گی اور اس ظلم کے خلاف کسی بھی قربانی سے دریغ نہ کرے گی ۔

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker