ہندوستان

شاہین باغ علاقہ میں ٹریفک معاملہ: دہلی ہائی کورٹ نے پولس سے کہا،قانون انتظام اورعوام کے مفادکودیکھتے ہوئے کارروائی کریں

نئی دہلی: 14؍جنوری(بی این ایس)شاہین باغ علاقے میں گاڑیوں کی آمدورفت شروع کرنے کی مانگ کولے کردہلی ہائی کورٹ میں دائرعرضی پرپولس کوہدایت دی کہ قانون انتظام اورعوام کےمفادکودیکھتے ہوئے کارروائی کی جائے۔ساتھ ہی ہائی کورٹ نے یہ بھی کہاکہ لوگوں کی پریشانی دیکھتے ہوئے قانون انتظام کے تحت پولس کبھی بھی روڈخالی کراسکتی ہے۔آپ کوبتادیں کہ شاہین باغ علاقے میں شہریت ترمیمی قانون کے خلاف جاری مظاہروں کے چلتے دہلی میں سریتاوہارسے کالندی کنج کے بیچ گاڑیوں کی آمدورفت کئی دنوں سے بندہیں جس سے اس علاقے کے آس پاس رہنے والے لوگوں کے لئے دقتوں کاسامناکرناپڑرہاہے۔اب اس سے پریشان لوگوں نے اس راستے کوکھلوانے کے لئے مظاہرے بھی کئے۔سریتاوہارسے کالندی کنج کے بیچ سڑک نمبر13اے پرٹریفک بندہونے کی وجہ سے نوئیڈاسے دہلی کی طرف آنے والے لوگوں سے متھراروڈ،آشرم اورڈی این ڈی روڈ اوربدرپورسے آنے والوں کوآشرم چوک والے راستے کااستعمال کرنے کی اپیل کی گئی تھی۔وہیں آمدورفت جاری کرنے کی مانگ کولے کردی گئی عرضی میں کہاگیاتھاکہ سڑک بندہونے سے روزانہ لاکھوں لوگوں کودقت کاسامناکرناپڑرہاہےاوروہ گذشتہ ایک مہینے سے الگ الگ راستوں سے جانے کے لئے مجبورہیں۔وکیل اورسماجی کارکن امت ساہنی کے ذریعے داخل عرضی میں دہلی پولس کمشنرکوکالندی کنج ،شاہین باغ پٹی اوراوکھلا انڈرپاس کوبندکرنے کی ہدایت کرنے کی مانگ کی گئی ہے۔
اس میں کہاگیاکہ اس راستے کااستعمال کرنے والے بچوں کواسکول کے وقت میں سے دوگھنٹے پہلے گھرچھوڑناپڑرہاہے۔پی آئی ایل میں دعویٰ کیاگیاہے کہ آفیسرعلاقے کے باشندوں اوردہلی اترپردیش اورہریانہ کے لاکھوں کوراحت دینے کے لئے مناسب کارروائی نہیں کرپائے ہیں۔ساہنی نے کہاکہ انہوں نے جنوری کوآفیسروں کومیمورنڈم سونپا لیکن آج تک کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker