ہندوستان

ہمیں اپنے ملک کی جمہوریت پر ناز ہے اور اس کو بچانا ہماری ذمہ داری۔ اسلامک مشن اسکول کے ڈائریکٹر مولانا فیضی کا یوم جمہوریہ کے موقع پر خطاب

جالے ۔/26 جنوری ( پریس ریلیز )

اسلامک مشن اسکول جالے میں یوم جمہوریہ کا جشن پورے جوش وخروش کے ساتھ منایا گیا پرچم کشائی سے قبل اسکول کے طلبہ وطالبات نے اپنے اساتذہ مسکان پروین، شبینہ پروین، نہا پروین، صابیہ پروین، گلفشاں پروین اور رانی پروین کی نگرانی میں ترنگا ریلی نکالی اور جمہوریت کے نعرے لگائے جب کہ اس موقع پر جالے دوگھرا اور لتراہا کی کئی قابل ذکر ہستیاں بھی موجود رہیں اور انہوں نے طلبہ وطالبات کے اس اقدام کی سراہنا کی،پرچم کشائی کا عمل اسکول کے ڈائریکٹر مولانا ارشد فیضی قاسمی کے ہاتھوں انجام پایا اس موقع پر انہوں نے اپنے مختصر خطاب میں جہاں یوم جمہوریہ کی تاریخی حیثیت پر روشنی ڈالی وہیں انہوں نے کہا کہ آزادی کے بعد جمہوریت کی تشکیل کا مقصد ملک سے بھید بھاو کے مسئلے کو ختم کرکے پورے ہندوستان کو ایسی اتحادی لڑی میں پرونا تھا جس میں مذہب یا ذات برادری کی کوئی تفریق نہیں ہوگی مگر آج ستر دہائیاں گزر جانے کے بعد ملک میں جس طرح کے سنگین ماحول کو جنم دینے کی کوشش کی جارہی ہے اس کے بھیانک نتائج نے ہر کسی کے چہرے پر فکر کی لکیریں ڈال دی ہیں اس لئے ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم ملک کے جمہوری نظام کی اہمیت کو سمجھتے ہوئے اس کی پاسداری کا عہد کریں مولانا فیضی نے کہا کہ نفرت کی بنیاد پر ملک کو توڑنے کی سازش کرنے والے لوگ ہندوستان کے وفادار نہیں ہو سکتے اس لئے ہمیں مل کر ایسی سازشوں کے خلاف لڑنا اور اس ملک کے جمہوری اقدار کی حفاظت کی کوشش کرنی ہوگی انہوں نے کہا کہ ہم ایک جمہوری ملک کے آزاد شہری ہیں اور ہمیں جمہوری دستور کا وہی فارمولہ قبول ہے جس کا خاکہ بھیم راو امبیڈکر جی نے ہمارے سامنے پیش کیا تھا اگر اس میں کسی طرح کی چھیڑ چھاڑ ہوگی تو ہم اسے قبول نہیں کر سکتے کیونکہ ایسا کرنا ملک کے ساتھ کھلی غداری ہےانہوں نے یاد دلایا کہ آج کا یہ دن ہمارے اندر اس فکر کی بنیاد رکھتا ہے کہ ہمیں اپنے اکابر کی قربانیوں کو یاد رکھتے ہوئے ملک کے جمہوری دستور کی پاسداری کے لئے ہر ممکن اقدامات کرنے چاہئے اس لئے ہم اپنے ان بزرگوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں جن کی قربانیوں کے صدقے ہمیں آزاد ملک میں جمہوریت کے سائے میں جینے کا حق حاصل ہوا مولانا فیضی نے کہا کہ میں یہاں آئے ہوئے تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اپنے طلبہ وطالبات سے کہنا چاہونگا کہ آپ اس ملک کے باوقار شہری ہیں اور آزادی کے ہر جذبے سے جینے کا حق آپ کو اس قانون نے دیا ہوا ہے جس کے سائے میں ہم نے ابتک کو سفر پوری خود اعتمادی سے طے کیا ہے اس لئے آپ اپنے اندر اسی حوصلے کو بیدار رکھئے جو حوصلہ آپ کے بزرگوں نے آزادی کے موقع پر پیش کیا تھا ورنہ یاد رکھئیے اگر آپ اپنے ماضی کو بھول گئے تو آپ کے لئے مستقبل کی راہیں دشوار ہو جائیں گی اور آنے والے دنوں میں آپ کو ان حالات کا سامنا کرنا ہوگا جس کا کبھی تصور بھی نہیں کیا گیا ہوگا انہوں نے کہا کہ ہم ہندوستان سے بے پناہ محبت کرتے ہیں اور ہماری اس محبت کی کسی کو کوئی دلیل مانگنے کا حق نہیں بلکہ ہمارا جذبہ اور اس ملک سے وفاداری ہی ہماری محبت کی پہچان ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker