ہندوستان

مولانگر دھرنا “شاہین باغ دھرنا گاہ” میں تبدیل

مولانگر سیتامڑھی ۲۷ جنوری (بصیرت نیوز سروس) آج سے نو روز پہلے ۱۹/ جنوری بروز منگل کو “مولانگر” میں مقامی باشندوں نے حکومت کے سیاہ قوانین کے خلاف جو چھوٹا سا مظاہرہ شروع کیا تھا، آج اسے نو دن مکمل ہوگئے، نو دن پہلے جس دھرنے میں تقریبا سو مقامی لوگ تھے آج اسے قرب وجوار کے سات گاؤں کے ہزاروں افراد نے ایک عظیم آندولن کی شکل دے دی ہے، ان باتوں کا اظہار خیال مولانا سعید الرحمن سعدی قاسمی پریس ریلیز سے کر رہے تھے،

انھوں نے ذرائع ابلاغ پر اطلاع دیتے ہوئے کہا کہ پہلے یہ دھرنا “آزاد چوک مولانگر” پر جاری تھا لیکن جگہ کی قلت کی بنا پر اب اسے اسی گاؤں میں ایک وسیع وعریض جگہ پر “شاہین باغ دھرنا گاہ” کا نام دے کر منتقل کردیا گیا ہے اور ہر گزرتے دن کے ساتھ نہ صرف مظاہرین کے عزم و حوصلے مزید جوان ہورہے ہیں بلکہ ان کی تعداد اور بستیوں کی شمولیت میں بھی اضافہ ہوتا جارہا ہے، جوان مردوں کے ساتھ ساتھ کم عمر بچے، بچیاں، ضعیف العمر بوڑھے اور بوڑھیاں، اسکول اور مدرسہ کے طلبہ و طالبات کی بڑی تعداد کئی کئی کیلومیٹر کے فاصلے سے پیادہ چل کر دھرنے میں شرکت کررہی ہے۔
انھوں نے کہا کہ خوشی کی بات یہ ہے کہ عوام کی کثرت اور تنظیم و قیادت کی کمی کے باوجود ان کا سارا نظم ونسق، نعرے اور نظم، تقاریر اور بیانات سب میں جوش اور ہوش کا بہترین توازن نظر آرہا ہے۔
انھوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ضلع اور بلاک سطح کی زیادہ تر دینی و سماجی تنظیمیں، اور ملت کی قیادت کے مدعی حضرات کا دور دور تک کوئی اتا پتا نہیں ہے۔
موصولہ اطلاعات کے مطابق آج مداری پور پنچائت میں شامل بستیوں کے باشعور افراد ایک بڑی تعداد میں بعد نماز عصر یحی پور چوک پر کینڈل مارچ کی شکل میں میں شامل ہونے کے لیے نکلیں گے، پھر یحی پور سے شاہپور اور آواپور ہوتے ہوے یہ ریلی مولانگر “شاہین باغ دھرنا گاہ ” میں پہنچے گی۔
ذرائع کو یہ بتایا کہ خوش آئند اور حوصلہ افزا خبر یہ ہے کہ ہندوستان کے ابھرتے ہوے جانباز اور بے باک لیڈر”کنہیا کمار صاحب” سے ان کے بہار سفر کے دوران یہاں آنے کے حوالے سے منتظمین کی بات طے ہوگئی ہے، اور وہ ۲/ فروری کو ان شاءاللہ اس مظاہرہ میں شامل ہوں گے۔
یہاں یہ بتاتے چلیں کہ ۳/ فروری کو شہر سیتامڑھی کے دھرنے میں ان کی شمولیت ہے جب کہ ۴/ فروری کو وہ جالے (حلقہ پارلیمانی مدہوبنی) میں ایک عظیم مجمع کو خطاب کریں گے۔
دھرنے میں شامل افراد نے عوام الناس سے اپیل کی ہے کہ وہ بلا تفریق مذہب و مسلک “ضلع سیتامڑھی” بطور خاص پوپری اور باج پٹی بلاک کے باشندگان زیادہ سے زیادہ تعداد میں اس ریلی اور مظاہرہ میں شامل ہوکر ملک وملت کے لیے اپنی قربانی پیش کریں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker