Baseerat Online News Portal

اپنی ہی حکومت کے خلاف بولے شیوسینا ممبر اسمبلی تاناجی ساونت، این سی پی کے وزراء پر سادھا نشانہ

ممبئی:13فروری (بی این ایس )
مہاراشٹر میں شیوسینا کے ایک رکن اسمبلی اپنی ہی حکومت سے ناراض دکھائی دئے اور حکومت میں شیو سینا کی اتحادی این سی پی کی قیادت کو کھلے عام آڑے ہاتھوں لیا۔یہ رکن اسمبلی ہیں تاناجی ساونت جو کہ ریاست کی پرادا اسمبلی سیٹ سے منتخب ہوکر آئے ہیں۔جب سے مہاراشٹر میں تین پارٹیوں کی مخلوط حکومت بنی ہے، اس کے بعد سے تینوں ہی پارٹیوں کے رہنماؤں کی جانب سے دیے گئے بیانات کی وجہ سے کوئی نہ کوئی تنازعہ کھڑا ہو رہا ہے۔تازہ تنازعہ شروع ہوا ہے شیوسینا ممبر اسمبلی تاناجی ساونت کے بیان سے جو پچھلی دیویندر فڑنویس کی حکومت میں وزیر بھی رہ چکے ہیں۔ساونت نے یہ کہہ کر ہنگامہ کھڑا کر دیا کہ موجودہ حکومت کے کئی وزیر مراٹھواڑا مخالف ہیں۔انہوں نے الزام لگایا کہ مغرب مہاراشٹر سے آنے والے کئی وزیر مراٹھواڑا مخالف حرکتیں کر رہے ہیں۔انہوں نے ریاست کی پچھلی بی جے پی حکومت کی تعریف کرتے ہوئے کہاکہ پچھلی حکومت نے خشک سالی سے دوچار مراٹھواڑا میں پانی سپلائی کرنے کے لئے مناسب قدم اٹھائے تھے۔ دراصل تاناجی ساونت کا نشانہ این سی پی کے رہنماؤں پر تھا جو کہ مغربی مہاراشٹر سے آتے ہیں۔ساونت نے ریاست کے نائب وزیر اعلی اجیت پوار پر نشانہ لگاتے ہوئے کہاکہ وہ مراٹھواڑا کو زندہ رکھنے والے پانی کو بند کرنے کی بات کر رہے ہیں جو ہم ہونے نہیں دیں گے۔

You might also like