ہندوستان

اقلیتی ترقیاتی کارپوریشن سے مسلم برادریوں کی اکثریت کو باہر کرنا آسام میں اور زیادہ فرقہ وارانہ تقسیم کا ہوگا باعث: پاپولر فرنٹ

نئی دہلی: 13؍فروری(پریس ریلیز)پاپولر فرنٹ آف انڈیا کے قومی سکریٹری عبدالواحد سیٹھ نے مسلم اقلیتی طبقے کی اکثریت کو باہر کرتے ہوئے کھلونجیہ مسلم ڈیولپمنٹ کارپوریشن کا نیانام رکھنے کے آسام ویلفیئر آف مائنارٹیزاینڈ ڈیولپمنٹ ڈپارٹمنٹ کے فیصلے پر سوال اٹھایا ہے۔
عبدالواحد سیٹھ نے آج میڈیا کو جاری بیان میں کہا کہ ”یہ فیصلہ آسام کی مذہبی برادریوں کے بیچ اور زیادہ درار پیدا کرے گا۔“آسام ویلفیئر آف مائنارٹیز کے وزیر رنجیت دتّہ نے یہ اعلان کیا ہے کہ کھلونجیہ اور مسلم کے الفاظ کو مخصوص آسامی نسلی مسلم برادریوں کے نام سے بدل کر کارپوریشن کا دوسرا نام رکھا جائے گا۔
آل آسام کوچاری سماج یہ مطالبہ کرتا رہاہے کہ آسام کی غیرقبائلی برادریوں کو ’کھلونجیہ‘ یا ’سودیشی‘ کے دائرے سے باہر کیا جائے۔ یہ چیز بی جے پی کیلئے دودھاری تلوار ثابت ہوگی جس سے ایک طرف نسلی آسامی مسلمان دوسرے مسلمانوں کے خلاف ہو جائیں گے اور دوسری طرف بنگالی بولنے والے مسلمانوں کو اور زیادہ ہراساں کیا جانے لگے گا۔
این آر سی کے نفاذ اور سی اے بی کے پاس ہونے کے بعد سے ریاست میں پہلے ہی افراتفری کا ماحول ہے اور نسلی جماعتیں سب بی جے پی کے خلاف ہو گئی تھیں۔ اس لئے موجودہ فیصلے کو اس طور پر بھی دیکھا جانا چاہئے کہ یہ برسراحتجاج آسامی نسلی جماعتوں کو خوش اور خاموش کرنے کی ایک کوشش ہے۔عبدالواحد سیٹھ نے حکومت سے غیرآسامی اقلیتوں کے خلاف اس امتیازی و تفریقی قانون کو واپس لینے کا مطالبہ کیا۔

Tags

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker