ہندوستان

دہلی بھاجپا شکست کا لے رہی ہے جائزہ،ہار کا ٹھیکرا کانگریس کے سر پھوڑدیا

نئی دہلی:14فروری ( بی این ایس )
دہلی بی جے پی نے ذلت آمیز شکست کا جائزہ لینے کے لئے میٹنگیں شروع کر دی ہیں، بی جے پی کو اب یہ بھی محسوس ہو رہا ہے کہ دہلی اسمبلی انتخابات میں اس کی شکست کے پیچھے کانگریس کی بہت خراب کارکردگی بھی ذمہ دار رہی ہے۔ بی جے پی ریاستی دفتر میں لگے دو درجن پوسٹروں میں سے ایک پوسٹر پر لکھا ہے:’ جیت سے ہم مغرور نہیں ہوتے، شکست سے ہم مایوس نہیں ہیں‘۔ یہی ایک پوسٹر ہے جو پارٹی کارکنوں میں امید پیدا کر رہا ہے۔ جمعہ کو پارٹی کے ریاستی صدر منوج تیواری اور سیکرٹری جنرل ارون سنگھ نے 140 سے زیادہ عہدیداروں سے بند کمرے میں ہار کی وجوہات جاننے کی کوشش کی ۔ذرائع کے مطابق کہ بی جے پی کی شکست کے پیچھے مفت بجلی اور پانی کے موضوع کو منشور میں شامل نہ کرنا، 60 سے زیادہ سیٹوں پر کانگریس کی ضمانت ضبط ہونا، کئی سیٹوں پر ٹکٹ تقسیم کے بعد ہوئی گروپ بندی، کچھ ممبران پارلیمنٹ کے طریقۂ کار اور انتخابات مہم میں زور نہ لگانا، جیسے وجہ بتائے گئے ہیں۔ اگرچہ اس کے باوجود ووٹ بینک بڑھنے کی فیصدی پیش کرکے اپنی پیٹھ تھپتھپائی جا رہی ہے۔منوج تیواری نے کہا کہ آج ہماری احتسابی میٹنگ چل رہی ہے، داخلی طور پر جائزہ لیا جارہا ہے ۔انتخابات ضرور ہارے ہیں، لیکن ہمارا مینڈیٹ بڑھا ہے۔اگلے تین دن تک بی جے پی ہارنے والے امیدواروں، کونسلر اور باہر سے انتخابی مہم کرنے کے لئے آئے رہنماؤں سے ہار کی وجہ پوچھے گی۔ دہلی کینٹ سے بی جے پی امیدوار منیش سنگھ بھی ہار کا سبب بتانے بی جے پی آفس پہنچے۔ وہ آخری وقت میں سیٹ تبدیل کرنے اور بجلی پانی کے مسئلے کو شکست کا بڑا سبب بتا رہے ہیں۔ منیش سنگھ نے کہا کہ بجلی پانی کا معاملہ ہے، پوری دہلی کے ہارنے کا سبب یہ رہا کہ کانگریس کی ضمانت ضبط ہو رہی ہے۔اسمبلی انتخابات میں ملی اس ہار کے بعد اب دہلی الیکشن انچارج پرکاش جاوڈیکر اور ریاستی صدر منوج تیواری پر بھی انگلیاں اٹھ رہی ہیں۔ پارٹی اب محسوس کر رہی ہے کہ کجریوال کو دہشت گرد کہنا اور گولی مارنے جیسے نعرے لگوانے سے پڑھے لکھے ووٹروں، خاص طور پر خواتین پر اس کا الٹا اثر ہوا ہے، گزشتہ بیس سال سے مسلسل اسمبلی انتخابات ہارنے کے باوجود کسی مقامی لیڈر کا خود کوقدرآور ثابت نہ کر پانے کو بھی بی جے پی کی ایک بڑی ناکامی کے طور پر شمار کیا جا رہا ہے۔

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker