ہندوستان

جامعہ تشدد:سی سی ٹی وی فوٹیج سامنے آنے کے بعد دہلی پولیس کی کئی طلباء سے پوچھ گچھ

نئی دہلی:1 2فروری (بی این ایس)
جامعہ ملیہ اسلامیہ کے کچھ طلبا نے جمعرات کو دہلی پولیس کی کرائم برانچ کے سامنے اپنا بیان درج کرایا، جو 5 دسمبر کو یونیورسٹی کیمپس میں پولیس کی کارروائی کے دوران زخمی ہو گئے تھے۔دہلی پولیس نے بدھ کو جامعہ ملیہ اسلامیہ کے 10 طلبا ء کو نوٹس دے کر ان سے 5 دسمبر کے تشدد کے معاملے میں پوچھ گچھ کے لئے پیش ہونے کو کہا تھا۔ ایک سینئر پولیس افسر نے بتایا کہ دہلی پولیس کی کرائم برانچ کی ایک ٹیم بدھ کو یونیورسٹی کیمپس پہنچی تھی اور طالب علموں کو نوٹس دیئے۔ جن طالب علموں کو پوچھ گچھ کے لئے بلایا گیا، ان میں کچھ ایسے بھی طالب علم ہیں، جنہیں واقعہ کی رات حراست میں لیا گیا تھا. اس میں سے کچھ کی شناخت حال میں سامنے آئے سی سی ٹی وی کے ویڈیو کے ذریعے کی گئی ہے اور کچھ ایسے طالب علم ہیں، جو واقعہ کے دن زخمی ہو گئے تھے۔ذرائع کے مطابق تشدد میں طلبا کے کردار کی بھی جانچ کی جا رہی ہے، پوچھ گچھ کے لئے جمعہ کو بھی کچھ طلبا کو بلایا گیا ہے۔ طلبا سے یہ پوچھا جا رہا ہے کہ ان کو چوٹ کیسے لگی؟۔ کرائم برانچ کے ایک سینئر افسر نے بتایا کہ پوچھ گچھ کے لئے ان طلبا کو کہا جا رہا ہے جو تشدد کے دوران زخمی ہوئے تھے۔ پولیس حکام کے مطابق ایسے زخمی طلباء کی تعداد 30 سے زیادہ ہے۔پولیس نے ان طالب علموں کے موبائل نمبر بھی لئے ہیں تاکہ واقعہ والے دن ان کی لوکیشن کی جانچ کی جا سکے۔ کرائم برانچ کے حکام کے مطابق جمعہ کو بھی بہت سے طالب علموں کو پوچھ گچھ کے لئے بلایا گیا ہے۔پولیس نے جامعہ کے دو طلباء سے بدھ کو بھی پوچھ گچھ کی تھی۔ کرائم برانچ جامعہ ملیہ کی سوشل میڈیا پر وائرل ہوئے ویڈیو کی بھی تحقیقات کر رہی ہے، پولیس ویڈیوز کی درست کی تحقیقات کے لئے جلد ہی فورینزک لیب بھیجے گی۔گزشتہ چند دنوں میں جامعہ کے سی سی ٹی وی میں قید ہوئے کئی ویڈیو کلپس وائرل ہوئے ہیں، جس میں پولیس کو طلبا پر لاٹھی چارج کرتے کیمپس کے املاک کو تباہ کرتے دیکھا جا سکتا ہے۔ ان ویڈیوز میں صاف دیکھا جا سکتا ہے کہ پولیس اہلکار یونیورسٹی کی لائبریری میں سی سی ٹی وی کیمروں کو لاٹھیوں سے توڑ رہے ہیں۔

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker