ہندوستان

ضلع پورنیہ کے کل جماعتی میٹنگ میں حکومت کے سیاہ قانون کے خلاف تحریک کومضبوط بنائے رکھنے کافیصلہ

پورنیہ:۲۲/فروری(عادل فریدی/بی این ایس)امارت شرعیہ بہاراڑیسہ وجھارکھنڈ پھلواری شریف پٹنہ کی دعوت پرمورخہ ۲۲/فروری ۰۲۰۲کومدرسہ انجمن اسلامیہ پورنیہ کے احاطے میں ضلع سطح کے مختلف سیاسی وملی جماعتوں کے ذمہ داران ونمائندگان اوربااثرعلماء وائمہ اوردانشوران کی ایک مشترکہ میٹنگ زیرصدارت نائب ناظم امارت شرعیہ مفتی محمدسہراب ندوی صاحب منعقدہوئی۔میٹنگ کاآغاز کرتے ہوئے محترم نائب ناظم صاحب نے ملک کی موجودہ صورت حال پر روشنی ڈالتے ہوئے امارت شرعیہ اورامیرشریعت مفکراسلام حضرت مولانا محمدولی رحمانی صاحب کے جہدمسلسل کونہایت ہی جامع انداز میں بیان کیا۔اورکہاکہ سی اے اے،این آرسی اوراین پی آرکے خلاف ملک میں جوتحریک جاری ہے۔اس تحریک کومضبوط اورکامیاب بنانے کے لئے دہلی اورپٹنہ میں محتلف سیاسی اورملی جماعتوں کے ساتھ کئی میٹنگیں ہوچکی ہیں۔اوراورامارت شرعیہ اس سلسلہ میں بیداری پیدارکرے کے لے مسلسل دورے پرہے۔ضرورت تھی کہ ضلع سطح پر بھی سیاسی،سماجی اورملی جماعتوں نیز علماء وائمہ کرام کے ساتھ اس موضوع پربیٹھاجائے اورضلع سطح پر تحریک کومضبوط بنائے اورہردھرم وہرمذہب کے لوگوں تک ان قوانین کے نقصانات بتانے کاکام منظم طورپرکیاجائے۔خاص طورپر ایس سی وایس ٹی طبقہ کے لوگوں تک پہنچ کرانہیں بیدارکرنے کاکام تحریکی طورپر انجام دیاجائے اوریہ کام تمام جماعتوں کے لوگ مل جل کرکریں توآواز بھی مضبوط ہوگی اوراثرداربھی ہوگی۔چنانچہ اسی مقصدسے حضرت امیرشریعت کی ہدایت پر ضلع سطح کی یہ میٹنگ بلائی گئی۔اس موقع پرسابق رکن اسمبلی غلام حسین نے این آرسی اورسی اے اے کے نقصانات پر روشنی ڈالتے ہوئے کہاکہ ہم امارت شرعیہ کے مشکورہیں کہ ان کی طرف سے مسلسل بیداری کاسلسلہ جاری ہے۔ یہ این آرسی کامسئلہ صرف مسلمانوں کانہیں ہے بلکہ اس میں تمام غریب اوردلت طبقے کے لوگ بھی متاثرہوں گے۔اس لئے میری درخواست ہے کہ مسلمانوں کو آگے رکھنے کے بجائے ہمارے برادران وطن پیش قدمی کامظاہرہ کریں اورمسلمانوں کواپنے پیچھے رکھیں۔میں امیددلاتاہوں کہ مسلمان آپ سے قدم بقدم شانہ بشانہ آپ کے ساتھ چلنے کوتیاررہیں گے۔میٹنگ میں اظہارخیال کرتے ہوئے ضلع کانگریس صدراندوسنہانے کہاکہ ہماری پارٹی مضبوطی کے ساتھ سیاہ قانون کے خلاف کھڑی ہے۔ہم ضلع پورنیہ میں اس تحریک کومضبوط بنانے میں لگے ہیں۔اوراب مزیدمضبوطی کے ساتھ اس کو آگے بڑھانے کے لئے آخری دم تک ڈٹے رہیں گے۔آرجے ڈی ضلع صدرمتھلیش کمارداس نے بڑی قوت کے ساتھ کہاکہ آرجے ڈی کے کارکنان اس تحریک کومضبوط بنانے میں لگے ہیں۔آگے جس طرح کابھی حکم ملے گاہم پارٹی کارکنان کے ساتھ کھڑے دکھیں گے۔بہوجن مکتی مورچہ کے پروفیسرآلوک کماریادونے کہاکہ دستورہندنے سب کو برابرکاحق دیاہے۔اورسنویدھان سے بڑھ کرکچھ نہیں ہوسکتاہے۔اس لئے ہم آخر ی دم تک اس لڑائی کولڑیں گے۔آرایس ایس کے ایجنڈے سے ہمارااختلاف بہت قدیم ہے۔بھاکپامالے ضلع کمیٹی کے رکن اسلام الدین نے کہاکہ این آرسی اورسی اے اے مرکزی حکومت کو ہرحال میں واپس لیناہوگا۔ہماری پارٹی اول دن سے ہی اس کی مخالفت کررہی ہے۔سی پی ایم کے ضلع منتری نیل سنگھ نے اظہارخیال کرتے ہوئے کہاکہ اس کالے قانون کے خلاف ہم اورہماری پارٹی ہے۔اس کے لئے ہم پورے طورپر اس کااحتجاج کررہے ہیں اورآئندہ بھی کرتے رہیں گے۔آرجے ڈی کے جنرل سکریٹری کمل کشورنے کہاکہ یہ ایساکالاقانون ہے۔جس میں صرف مسلمان ہی متاثرنہیں ہوں گے بلکہ ہندوستان کے رہنے والے جھگی چھوپڑیو ں میں زندگی گذارتے ہیں وہ سب سے زیادہ متاثرہوں گے۔یہ غریبوں وکمزورو ں کے حق کی لڑائی ہے۔جس کوجتینے کے لئے ہم سب کو مل کرکوشش کرناہے۔عام آدمی پارٹی کے ضلع صدروکاس جھانے کہاکہ ہم اورہماری پارٹی سی اے اے اوراین پی آرکے صرف خلاف ہی نہیں ہے بلکہ اس کی مخالفت میں قائدانہ رول بھی اداکررہے ہیں کیو ں کہ یہ قانون ہماری پارٹی ارہندوسنسکرتی کے خلاف ہے۔بام سیف کے مکیش یادونے کہاکہ ہماری پارٹی شروع دن سے ہی ای بی ایم کے خلاف لڑرہی ہے اورہماری پارٹی بام سیف کی قیادت میں اوردوسری پارٹی کے تعاون سے موجودہ قانون کے خلاف مل جل کراس کے خلاف مظاہرہ کررہی ہے۔ضلع جمعیت سکریٹری مفتی احمدحسین قاسمی نے کہاکہ جمعیت علمائے ہندکسی تعارف کامحتاج نہیں ہے۔انہوں نے کہاکہ جمعیت علما پورنیہ امارت شرعیہ کے ساتھ ہے۔ان کے علاوہ کانگریسی لیڈرشاہد حسین، ایم آئی ایم آئی کے لیڈرمکرم حسین،بھاکپامالے کے یمناپرسادمرمر،بھارت مکتی مورچہ کے ضلع صدرامیش پرسادیادو،آرجے ڈی مہانگرصدرصبیح احمد،رنجن سنگھ،انجمن اسلامیہ کے صدرحسن امام وغیرہ نے بھی اظہارخیال کیا۔واضح رہے کہ میٹنگ کومنعقدکرنے میں کے آرہاشمی عرف دولہا،قاضی شریعت پورنیہ مولاناارشدقاسمی،مولاناافتخاراحمدقاسمی،مولانامنظورنعمانی،مولاناعبدالقیوم ندوی،محمدشاہدحسین،مولانا وحیدالزماں امام وخطیب جامع مسجد اورمدرسہ انجمن اسلامیہ کے جملہ اساتذہ نے خصوصی حصہ لیا۔اس میٹنگ میں این ڈی اے کے علاوہ سبھی سیاسی پارٹیوں کے نمائندگان اورسماجی وملی جماعتوں کے ذمہ داران نے شرکت کی۔اس میٹنگ میں طے پایاکہ پورے ضلع میں ان قوانین کے خلاف جوتحریک اوردھرنے چل رہے ہیں مشترکہ طورپران کومضبوط بنایاجائے گا۔گاؤں ودیہی علاقوں کانظام بناکرایس سی وایس ٹی کے لوگوں کوان قوانین کے نقصانات کے بتلانے کاکام کیاجائے گا۔اورقریب وقت میں ایک بڑااجلاس تما سیکولرپارٹیوں کے تعاون سے منعقدہوگا۔جس میں ترنگاکے سائے میں سب لوگ ایک ساتھ جمع ہوں گے

Tags
Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker