Baseerat Online News Portal
Browsing Category

شعروادب

قربانی! کلام آفتاب اظہر صدیقی

از: آفتاب اظہر صدیقیخدا کی خوشنودی حاصل ہو جس سے وہ ہے قربانی عمل اسلام پر کامل ہو جس سے وہ ہے قربانیخدا کی راہ میں ہر کچھ لٹا دینا ہے قربانی خدا کے واسطے خود کو مٹا دینا ہے قربانیخلیل اللہ کی سنت کو دہرانا ہے قربانی رسول…
مزید پڑھیں ....

تم ہی بتا دو! (نظم)

آمنہ جبیں ( بہاولنگر)سنو نا !!کیسے بھلاؤں تجھ کوکیسے کروں جدا خود سےمیری روح کا حصہ ہومیری لمبی مسافت میںکوئی زادِ راہ نہیںبس اک تم ہی سب ساماں ہوجیسا تم چاہتے ہومیں ایسا کر…
مزید پڑھیں ....

چاہتے ہیں سکوں طلب تقسیم. (غزل)

غزلچاہتے ہیں سکوں طلب تقسیم دولتِ درد ہوگی کب تقسیممیرے حصّے میں ’’شب بخیر‘‘ آیا لفظ وہ کر رہے تھے جب تقسیمدونوں ہی مضطرب ہوئے دو چند بے قراری ہوئی عجب تقسیمقد میں آگے نکل گئے بچّے ہم کو ہونا پڑے نہ اب تقسیمہو گئے…
مزید پڑھیں ....

خونِ دل سے اِسے اب جلائیں گے ہم

غزل افتخاررحمانی فاخر نقش ہائے ستم کیوں مٹائیں گے ہم اَرمُغاں ہیں، یہ دِل سے لگائیں گے ہم تم نہ آؤگے ، تو چشم ِ نم کا چراغ خونِ دل سے اِسے اب جلائیں گے ہم قلزم بے کراں ہے ہماری یہ آنکھ اشک ِ فرقت مسلسل بہائیں گے ہم شوق ہے نا…
مزید پڑھیں ....

“شبِ آوارگی”

آمنہ جبیں ( بہاولنگر)دیکھو نہ آجابرِ رحمت برس رہا ہےہوائیں چہک رہی ہیںمنظر مہک رہے ہیںگیت سناتی ہوئیجھوم رہی ہیں ڈالیاںیوں لگ رہا ہےکہ بارش کی بوندیںتیری میری راہ تک رہی ہیں…
مزید پڑھیں ....

“حرفِ آخر'(نظم)

از قلم :آمنہ جبیںجب تیری دنیا سے لوٹ آؤں گی تب تجھے میں بہت یاد آؤں گی میرے ضبط کو میری فکر کو درکار ہے سکوت کے لمحے میں جو خاموشِ جاں ہوئی تب تجھے میں بہت یاد آؤں گی تو شب میں جب بھی اکیلا بیٹھ کے پھر چاند کو…
مزید پڑھیں ....

دکھ سب کا اک جیسا ہے ( نظم )

نتیجۂ فکر :اشرف جاوید ملکتمہیں کچھ یاد تو ہو گا عراقی شہریوں کے چیتھڑوں کی بوُ کہیں شامی مہاجر ننھے بچوں کا کفن لیتے ہوئے روتے ہوئے ہرسو تمہیں کچھ یاد تو ہو گا مدرآف آل بمب وہ افغانوں کے خوں سے لال ہوتی وادیوں کے بیچ…
مزید پڑھیں ....

ہم فلسطینی مسلمان ہیں

آفتاب اظہر صدیقیہمیں دشمن کی تلواروں سے ٹکرانا بھی آتا ہےفلسطینی غضنفر ہیں تو غُرّانا بھی آتا ہےہمارا بچہ بچہ غازیِ اسلام ہے لوگو!جہاں بھر کے شہیدوں میں ہمارا نام ہے لوگو!خدا کی راہ میں مرنا ہمارا کام…
مزید پڑھیں ....

رمضان جا رہا ہے

انصاری ظاہرہ فرید احمد،گلزار نگر،بھیونڈی (بی۔ایس۔سی،ایم۔اے،بی ایڈ) ہیں اشکبار آنکھیں رمضان جا رہا ہے رنج و الم ہے چھایا رمضان جا رہا ہے رحمت لیے ہمارے در پہ جو آگیا تھا افسوس صد ہمیں وہ مہمان جا رہا ہے بخشش کا تھا وہ ذریعہ، شیطان…
مزید پڑھیں ....